Skip to main content
مینیو

مستقبل بطور ایک الیکٹریشن

سیاہ بالوں اور داڑھی والا ایک شخص شلوار قمیض زیب تن کیے ہوئے ہے۔ وہ طاق کے سامنے کھڑے ہو کر کیمرے میں دیکھ کر مسکرارہے ہیں۔ طاق میں ڈبے رکھے ہوئے ہیں جس میں مختلف اقسام کا سامان موجود ہے۔
الیکٹریشن شکیل اور اُن کے رشتہ دار کی ورکشاپ ہے۔

مستقبل بطور ایک الیکٹریشن

میں نے پاکستان سے باہر کئی سال بطور الیکٹریشن کام کرتے ہوئے گزارے لیکن وہاں مجھے اپنے اہل خانہ کی بہت یاد آتی تھی ۔ سنہ 2018 میں جب میں پاکستان واپس آیا تو آغاز میں میری کمائی کچھ زیادہ نہیں تھی۔ اس دوران ایک دوست نے مجھے پی جی ایف آر سی کی خدمات کے بارے میں آگاہ کیا۔ اوراس طرح سے میری ایک نئی شروعات ہوئی۔

میرا نام شکیل ہے اور میری عمر 40 برس ہے۔ میرا تعلق پشاور سے تقریبا 30 کلو میٹر دور ایک چھوٹے سے قصبے سے ہے۔ یہ صوبہ خیبرپختونخوا میں ہے۔ میں نے زندگی کے نو سال سعودی عرب میں بطور الیکٹریشن کام کرتے ہوئے گزارے اور سنہ 2018 میں پاکستان واپس آنے کا فیصلہ کیا۔ میں اپنے گھر والوں کے ساتھ رہنا چاہتا تھا لیکن افسوس کہ بطور الیکٹریشن میری کمائی زیادہ نہیں تھی۔ تو میں نے پیشہ وارانہ طور پر خود کو بہتر بنانے کا فیصلہ کیا۔ میرا خیال تھا کہ اس سے مجھے بہتر مواقع میسر آئیں گے۔

میں نے پاکستان میں اپنا پیشہ کیسے تلاش کیا

ایک دوست نے مجھے پاکستانی جرمن فیسلیٹیشن اینڈ ری انٹیگریشن سینٹر (پی جی ایف آر سی) کی جانب سے فراہم کی جانے والی خدمات کے بارے میں بتایا۔ میں نے انٹرنیٹ پر تلاش کیا جہاں مجھے پی جی ایف آر سی کی جانب سے بزنس ڈویلپمنٹ (کاروباری ترقی) کی تربیت کے بارے میں پتہ چلا ۔ یہ مجھے اپنے لیے بالکل صحیح لگا: میرے پاس بطور الیکٹریشن کام کا بہت تجربہ تھا لیکن مجھے پتہ نہیں تھا کہ کاروبار کو کس طرح کھڑا کرتے اور چلاتے ہیں۔ میں نے تربیتی کورس کے لیے درخواست دی اور مجھے وہاں داخلہ مل گیا۔

ہمیں کام کے لیے جو بھی جاننے کی ضرورت تھی وہ ہمیں صرف تین دن میں سکھا دیا گیا ۔ ہم نے بک کیپنگ (کھاتوں) اور اکاؤنٹننگ (حساب کتاب) کے بارے میں سیکھا۔ انہوں نے یہ بھی سکھایا کہ صارفین سے کیسے تعلق بناتے اور نبھاتے ہیں۔ اور مجھے اب یہ بھی پتہ ہے کہ گودام کا انتظام کیسے چلایا جاتا ہے۔ تربیتی کورس کے بعد میں کافی پُراعتماد اور حوصلہ مند محسوس کررہا ہوں۔ اب میں آگے کا سوچ رہا ہوں۔ یہ سب میرے کاروبار اور میری ذات کے حوالے سے طوی المدتی مقاصد طے کرنے کیلیے ہے اور اسی طرح میں ان مقاصد کے حصول کےلیے کام کروں گا۔

مجھے الیکٹریشن کے کام کے حوالے سے کچھ سامان اور اوزار فراہم کیے گئے۔ جو چیز سب سے زیادہ فائدہ مند تھی وہ ڈیجیٹل وولٹ میٹر (وولٹیج چیک کرنے کا آلہ) تھا۔ ساتھ ہی ساتھ مجھے پیچ کس اور پلاس، ڈرل مشین اور تانبے کی تاریں بھی فراہم کی گئیں۔ اس میں ذاتی حفاظت کا سامان جیسے کہ خصوصی دستانے بھی شامل تھے۔

نئے کاروبار کا آغاز: ہماری توجہ شمسی توانائی کے پینلز پر مرکوز ہے

میں نے اور میرے رشتہ دار نے اپنے آبائی علاقے میں ایک دکان کرائے پر لی۔ ہمیں مرکزی سڑک سے نزدیک ایک اچھی جگہ مل گئی۔ ہم گاڑیوں کی بیٹریوں کی مرمت اور اُنہیں چارج کرتے ہیں۔ ساتھ ہی ہم کپڑے دھونے کی مشین اور دیگر الیکٹریکل آلات کی بھی مرمت کرتے ہیں۔ یہاں تک کہ ہم بلاتعطل بجلی فراہم کرنے والا سسٹم بھی فروخت کرتے ہیں۔ لوگ یہاں تو ہماری دکان پر آتے ہیں یا ہم اُن کے گھروں پر جا کر کام کرتے ہیں۔

تربیت کے دوران ہمیں سکھایا گیا تھا کہ ہمیں مسلسل یہ سوچتے رہنا چاہیے کہ ہم کس طرح اپنے کاروبار کو بہتر سے بہتر بناسکتے ہیں۔ پھر مجھے احساس ہوا کہ ہمارے علاقے کو بجلی کی کمی کا سامنا ہے اور کئی بار تو دن میں 22 گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے۔ کئی لوگوں کے لیے اس مشکل کا حل شمسی توانائی تھی۔ اس لیے میں نے اور میرے رشتہ دار نے شمسی توانائی کے پینلز کی مرمت کے کام کا فیصلہ کیا۔ یہاں تک کہ حال ہی میں ہم نے شمسی توانائی کے پینلز کی تنصیب کا کام بھی شروع کردیا۔

ایک سبق سیکھا: کاغذی کارروائی بہت ضروری ہے

تربیتی کورس سے جو ایک اور سبق سیکھا: میں روزانہ کی بنیاد پر رسیدوں، کمائی اور کاروباری اخراجات کا اندراج رکھتا ہوں۔ میں پہلے اس قسم کی چیزوں کا اندراج نہیں رکھتا تھا۔ میں زبانی طور پر حساب کتاب کرتا تھا۔ تاہم اب میں تمام کاروباری اخراجات اور کمائی کا حساب کتاب رکھتا ہوں۔ یہاں تک کہ جب میں مرمت کے کام کیلیے کسی جگہ جاتا ہوں تو وہاں تک کی پیٹرول کی قیمت بھی شامل کرتا ہوں کیونکہ پیٹرول بہت تیزی سے مہنگا ہورہا ہے۔

میں اپنے صارفین کو قیمتوں کی وضاحت پیش کرتا ہوں جس میں استعمال کردہ سامان یا مصنوعات کا معیار بھی شامل ہوتا ہے۔ یہ اس کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں اور اپنے دوستوں اور رشتہ داروں میں میری سفارش کرتے ہیں۔

 ایک شخص لکڑی کی میز پر کھڑا ہے۔ وہ کوئی الیکٹرل آلے کی مرمت کررہا ہے۔
شکیل اور اُن کے رشتہ دار دیگر چیزوں کے ساتھ مرمت کی خدمات فراہم کرتے ہیں۔

دوسروں کی تربیت اور علم کی منتقلی

اپنی دکان کھولنے کے بعد سے میں نے اور میرے کزن نے بڑھتے ہوئے کاروبار کو سنبھالنے کے لیے کام سیکھنے والوں (شاگردوں) کو بھی رکھا۔ مجھے اپنا تجارتی علم منتقل کرتے ہوئے بہت خوشی ہوتی ہے۔ اور ساتھ ہی میں اپنے شاگردوں کو نیا کاروبار شروع کرنے کے گُر بھی سکھاتا ہوں۔ پی جی ایف آر سی کی جانب سے مجھے انتہائی فائدہ مند مدد فراہم کی گئی اور اس موقع سے مزید لوگ بھی فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔ بس بہادر بنیں

01/2023
 

 

یہ تحریر سادہ اور آسان زبان میں لکھی گئی تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ یہ سب کے سمجھنے کے لیے آسان ہو۔

پی جی ایف آر سی کی جانب سے مجھے انتہائی مفید مدد فراہم کی گئی ۔۔۔ اس موقع سے مزید لوگ بھی فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔ بس بہادر بنیں!
Shakeel

مزید بلاگ پوسٹس