Skip to main content
مینیو

اربیل کا کامیاب حجام

Ein Mann steht vor einem Friseursalon.
بیسٹون نے اپنا سیلون کھولا ہے۔

اربیل کا کامیاب حجام

میرا نام بیسٹون ہے؛میں 32 سال کا ہوں اورمیں عراق کے شہر اربیل سے آیا ہوں۔ میں شادی شدہ اور 2 بچوں کا باپ ہوں۔ہم سب 2018 میں جرمنی گئے ،کیونکہ عراق میں ہمارے لیے حالات پہلے سے بدتر ہوگئے تھے لیکن جرمنی میں بھی ہمارے لیے زندگی اچھی نہ تھی۔آج ہم اربیل واپس آچکے ہیں اور میرا اچھا کیریئر ہے۔ اب میں ایک ہیئر ڈریسر ہوں۔ یہ میری کہانی ہے:

2018 میں 5 مہینے میں اور میرے اہلخانہ نے ہیس کے مہاجرین کیمپ میں گزارے۔ یہ ہمارے لیے انتہائی مشکل وقت تھا۔ ہمیں دنیا بھر سے آئے لوگوں کے ساتھ اپنا کچن اور باتھ روم بانٹنا پڑتا تھا۔جرمنی کی ثقافت عراق سے یکسر مختلف تھی۔مجھے جرمن زبان سیکھنے میں مشکل ہوئی اورمجھے نوکری نہیں مل سکی تو میں نے عراق واپس لوٹنے کا فیصلہ کیا۔

عراق واپس آکر ہم نےاربیل میں قائم"جرمن سینٹر فار جوبز ،مائیگریشن اینڈ ری اینٹیگریشن" مختصر جی میک(جی ایم اے سی) سے رابطہ کیا۔انہوں نے مستقبل کیلیے نئے منصوبے تشکیل دینے میں میری مدد کی۔ میں نے تربیت سے دو چیزیں سیکھیں:دستکاری اور کامیاب کاروبار کیسے شروع کریں۔ اب مجھے بطور ہیئر ڈریسر اپنے آپ پر فخر ہے اور میں اربیل میں اپنا کاروبار کررہا ہوں۔ میری اہلیہ درزن کا کورس کررہی ہیں۔ مشاورت سے ہمیں نئے مواقع تلاش کرنے میں مدد ملی۔
 
Stand: 06/2019
اب مجھے اپنے چھوٹے سے کاروبار پر فخر ہے
بیسٹون،عراق

مزید بلاگ پوسٹس